جا دو اور نظر بد کا چیلنج کے ساتھ توڑ

پیارے پیغمبر جناب رسول اللہﷺنے ارشاد فرمایا: تقدیر پر اگر کوئی چیز سبقت لے جاتی ہے ۔ تو وہ نظر ہے۔ نظر ایک ہٹے کٹے اونٹ کو ہنڈیا پر پکنے پر مجبور کردیتی ہے۔ نظر ش یطان کے تیروں میں سے ایک تیر ہے جو اپنے نشانے پر جا کرلگتی ہے۔ آج ہمارے معاشرے میں بے شمار ایسے مسائل ہیں۔ بے شمار ایسی بیماریاں ہیں۔ جس کے بارے میں اکثر لوگ کہتے ہیں کہ ہماری ساری رپورٹ ٹھیک ہیں۔

لیکن ہماری بیماری دن بدن بڑھتی جار ہی ہے۔ ایک روایت میں آتا ہے کہ نبی پاک ﷺنے فرمایا: میری امت کی کثرت اموات نظر بد کی وجہ سے ہے۔ آج ہمارے معاشرے میں یہ جو ان گنت بیماریاں ہمارے اند ر پروان چڑھ رہی ہیں۔ ان کی وجوہات میں سے ایک بہت بڑی وجہ نظر بد ہے۔ اور آ ج لوگ اس نظر بد کی وجہ سے ایسے ایسے مسائل ، مصائب ، امراض ، پریشانیوں ، دکھوں، تکلیفوں اور رنجوں میں مبتلا ہور ہے ہیں۔

جس کی کوئی مثال نہیں ملتی ۔ نظر بد ایک ایسی بیماری جس میں آج کوئی فرد کوئی گھر ، کوئی خاندان ، کو ئی برادری ، کوئی علاقہ محفوظ نہیں ہے۔ یہ نظر بد ہمیں کیوں لگ رہی ہے؟ اس کے بے شمار اسباب میں سے ایک سبب یہ بھی ہے کہ ہم لوگوں نے جو خوبصورت زندگی پیارے پیغمبر جناب محمد ﷺ ہمیں بتلائی تھی کہ ہماری صبح کیسی ہونی چاہیے ؟ ہماری شام کیسی ہونی چاہیے ؟ ہماری رات کیسی ہونی چاہیے؟ صبح کا آغاز کیسے ہونا چاہیے؟

جو صبح کے اذکار ہیں۔ جو شام کے اذکار ہیں۔ گھر سے نکلنے کے جو اذکا ر ہیں۔ گھر میں داخل ہونے کے اذکار ہیں۔اپنے بچوں کو نظر بد سے بچانے کے جو اذکار ہیں۔ آج ہم لوگوں نے ان سارے اذکار کو فراموش کردیا ہے۔ یہی سبب ہے کہ آج ہم لوگ پریشان ہیں ۔ اسی نظر بد کے بارے میں دوست واحباب کو بتاتے رہتے ہیں کہ نظر بد کا ایک بہترین علاج ہے۔ ماں باپ کے وضواور غسل کے پانی سے علاج ہے۔

ہم سب سے پہلے جو ماں باپ ہیں ۔ وہ ایک بڑے سارے ٹب میں پہلے وضو کریں گے ۔ والد ہ وضو کرے گی۔ اور وہ سارا پانی ٹب کے اندر جمع کرے گی۔ یہ پانی جو ٹب کےاندر جمع کرناہے۔ اس کے اندر شیمپو یا اور کوئی چیز استعمال نہیں کرنی ۔ پھر اس کے بعداسی ٹب میں بیٹھ کر اسی میں نہا لیں گے ۔ اتنا نہا ئیں گے کہ آپ کے پورے جسم کا ایک بال برابر جگہ خشک نہیں رہنی چاہیے۔ اور خاص طور پر آپ کے جو ستر کے اعضا ء ہیں۔

ان کو بھی مکمل طور پر دھونا ہے۔ اسی طرح والد جو ہیں وہ ایک ٹب میں وضو کر یں اور پھر اس میں مکمل وضو کریں گے۔ اس کے ساتھ یہ دونوں پانیوں کوجمع کرلیا جائےگا۔ ایک نیا برتن لیں گے۔ اگر بچے کی عمر دس سا ل سے کم ہے ۔ تو پھر گیارہ پتے لیں گے۔ اگر دس سال سے زیادہ ہے تو پھر اکیس پتے لیں گے۔ بیری کے پتے لیں گے۔ ان کو دھو لیں۔ اور چھوٹے چھوٹے کاٹ لیں۔ اتنا پانی لیں گے کہ آدھے آدھے بازو اس میں ڈب ہوجائیں ۔

اب اس میں بازو اور ہاتھ ڈب کر کے ، دائیں سائیڈ ماں اور بائیں سائیڈ پر باپ بیٹھے گا۔ اور سات مرتبہ سورت الفاتحہ پڑھیں گے۔ سات مرتبہ آیت الکرسی پڑھیں گے۔ اور سات مرتبہ سورت الم نشرح پڑھیں گے۔ اور سات مرتبہ چارو ں قل پڑ ھیں گے۔ جس میں “سورت الکافرون، سورت اخلاص ، سورت الفلق، سورت الناس” یہ سات سات مرتبہ پڑھیں گے۔ا ور سات مرتبہ درود ابراہیم پڑھیں گے۔

یہ پڑھنے کے بعد اس پانی کو ابال لیں گے ۔ پھر اس کو ٹھنڈا کرکے ماں باپ کے وضو اور غسل کےپانی میں اس کو مکس کرلیں گے۔ پہلے نارمل طریقے سے شاور لیں گے ۔ یہ بچوں کے لیے بھی ہے۔ بڑوں کے لیے بھی ہے۔ مردوں کےلیے بھی ہے۔

عورتوں کے لیے بھی ہے۔ اور خاص طور پر ایسے بچے ہیں جو ضدی ہیں۔ جو جھگڑا کرتے ہیں۔ ایسے بچے جو بات نہیں مانتے ۔ جو پڑھنےکی طر ف نہیں آتے۔ ایسے بچے جو اپنی من مرضی کرنا چاہتے ہیں۔ من چاہی زندگی گزارنا چاہتے ہیں۔ ایک مرتبہ ہمارے کہنے پر آپ ان بچوں پر ضرور اپلائی کریں۔ ایسی بیماریاں جو آپ کے رپورٹس کےاندر نہیں آرہیں۔

ایسی بیماریاں جو آپ کے ٹیسٹ کے اندر نہیں آرہیں ۔ ایسی بیماریاں جس کو لے کر آج ڈاکٹروں نے اس کو کینسر تک ڈائیگونوس کرلیا۔ ایسے کئی ثبوت ہیں جن کے بارے میں ڈاکٹروں نے کہاکہ اس کا کوئی علاج نہیں ۔ آج یہ عمل ان مریضوں کو بتایا انشاءاللہ ! سوفیصد نفع بخشوایا۔

Leave a Comment