عورت کو گالی دینے سے کیا ہو تا ہے؟ مذاق مذاق میں گالے دینے والو۔

گالی ہمارے معاشرے کا حصہ بن چکی ہے۔ جس میں بڑے کیا چھوٹے کیا امیر کیا غریب کیا پڑھے لکھے ان پڑھ کیا ۔ سب مبتلا ہو تے جا رہے ہیں۔ یہ وہ عمل ہے جس کے کرنے سے انسان اللہ کی نظر سے گر جا تا ہے یہ وہ عمل ہے جو اللہ کے ہاں انتہائی نا پسند یدہ ہے۔ اور یہ وہ عمل ہے جس کی وجہ سے میرے محترم بھائیو اور بہنو ہم بیمار ہو تے ہیں۔ یہ عمل گالی دینا ہے۔ اور آج گالی دینا ہمارا کلچر بن چکا ہے۔ گالی کہتے کسے ہیں؟

یہ گالی ہو تی کیا ہے؟ میرے محترم بھائیو اور بہنو ہر وہ بول ہر وہ کلمہ ہر وہ جملہ جو دوسرے کو نا پسند یدہ ہے جو دوسرا سننا گوارا نہیں کر تا جو دوسرے کو اچھا نہیں لگتا جو دوسروں کے جذبات کو ٹھیس پہنچاتا ہے جو دوسروں کے جذبات کو مجروح کر تا ہے میرے محترم بھائیو اور بہنو وہ گالی ہی کہلاتی ہے

اللہ تعالیٰ نے جو ہمیں خوبصورت دین دیا ہے اس دین میں اللہ ہمیں بچانا چاہتے ہیں۔ ہر اس بات سے ہر اس قول سے ہر اس فعل سے ہر اس عمل سے جو ہمیں دنیا میں بدن کے اعتبار سے اور روح کے اعتبار سے تکلیف دینے والا ہے اور آخرت میں اللہ سے دور کر کے ہمیں جہ نم میں لے جانے والا ہے اللہ ہمیں ہر اس عمل سے بچانا چاہتے ہیں جو ہمارے بدن اور روح کے لیے دنیاوی طور پر نقصان دہ ہے اور آخرت میں جو اعمال جو اقوال جو افعال ہمیں جہ نم کے جہ نم میں شیط ان کے ساتھ لے جانے والے ہیں اللہ ہمیں ان سارے اعمال سے بچا نا چاہتے ہیں۔

اور گالی وہ عمل ہے جب انسان کسی کو گالی دیتا ہے وہ اللہ کی نظر سے گر جا تا ہے یہ وہ عمل ہے میرے محترم بھائیو اور بہنو جو اللہ کے ہاں انتہائی نا پسند یدہ ہے۔ یہ وہ عمل ہےجس سے اللہ نے نبی ﷺ کو تنبیہ کی کہ گالی سے بچو۔ گالی سے بچو۔ گالی سے بچو۔ یہ جو گالی دینا ہے آج ہمارا کلچر بن چکا ہے بڑے کیا چھوٹے کیا امیر کیا غریب کیا پڑھے لکھے کیا ان پڑھ کیا ہر شخص دوسرے کو نیچا دکھانے کے لیے جب ان کے پاس دلائل ختم ہو جا تے ہیں تو وہ گالیوں کا سہارا لیتے ہیں اور آج ہم اس قدر اس عادت میں مبتلا ہو گئے

کہ آج ہر شخص گالی دیتا ہوا دکھائی دیتا ہے۔ میرے محترم بھائیو یہ گالی آپ کے جسم کے اوپر کیا اثرات مر تب کر تی ہے۔ اس کو اگر ہم میڈیکل سائنس کے مطابق جاننے کی کوشش کر یں جیسے ہی ہم گالی سنتے ہیں تو یہ گولی کی طرح ہمارے جسم کو ہٹ کر تی ہے اور گالی سنتے ہی جیسے میرے کانوں نے گالی سنی فوراً میرے جو دل کی دھڑکن ہے وہ تیز ہو جا تی ہے۔