صرف جمعہ کے دن یہ عمل ضرور کر لیں۔ یہ مختصر قرآنی سورۃ بازو پر لکھ کر باندھیں

اللہ تعالیٰ نے اس اُمت کو جو خاص نعمتیں عطا فر ما ئی ہیں وہ کسی اور امت کو نہیں ملیں قرآنِ مجید جیسی کتاب کسی کے پاس نہیں ہے نور ہی نور روشنی ہی روشنی۔ اور سکون ہی سکون۔ صرف سورۃ یوسف کو ہی دیکھ لیں کونسا غم اور کون سی پریشانی ہے جس کا علاج اس میں نہ ہو۔ ایک عالم ِ دین کا طریقہ تھا کہ ان کے پاس کوئی بھی پریشان حال آ دمی آ تا اور اپنے مسئلے کا حل پوچھتا تو وہ فر ما تے روزانہ دو بار سورۃ یوسف پڑھ لیا کرو۔

پریشانی گھریلو قسم کی ہو یا خاندانی کوئی مالی پریشانی ہو یا سیاسی کسی کی جدائی کا غم ہو یا کوئی محبوب بچھڑ گیا ہو راستے بند ہو گئے ہوں یا مایوسی چھا گئی ہو روتے روتے آنکھیں بہہ گئی ہوں یا جیل کی سلا خیں بہت موٹی ہو گئی ہوں واقعی عجیب سورۃ مبارکہ ہے اس میں ایک تاریک کنواں ہے

اور پھر اس سے نجات بھی ہم میں سے کتنے لوگ طرح طرح کے اندھے کنو ؤں میں گر ے پڑے ہیں اس سورۃ میں جیل بھی ہے اور پھر ٹھاٹھ اور پھر شان والی رہائی بھی آج بھی ظال مانہ جیلوں میں گم نام جوانیاں سسک رہی ہیں آج ہم آپ کو ایک ایسا عمل بتانے جا رہے ہیں جس کے کرنے سے آپ کا روزگار چمک اُٹھے گا اگر کسی قسم کی حاجت ہے تو پوری ہو جا ئے گی اگر کوئی مشکل ہے تو وہ آسان ہو جا ئے گی آپ چاہتے ہیں کہ آپ کو اس وظیفہ کا پورا فائدہ ہو تو ہماری ان باتوں کو آخر تک ضرور دیکھیں۔

ہم تمام وظیفے انسانیت کی فلاح کے لیے لاتے ہیں لہٰذا اگر آپ ان وظائف سے فائدہ اُٹھانا چاہتے ہیں تو ا ن پر عمل کر نا ہو گا آپ کو۔ سورۃ یوسف قرآنِ مجید کی بارہویں اور مکی سورۃ ہے جو بارہویں اور تیر ہو یں سپارے میں واقع ہے حضرت یونس کے واقعے کو بیان کرنے کی وجہ سے اس کا نام یوسف رکھا گیا ہے

یہ ایک ایسا قصہ ہے جو اول سے آخر تک قرآنِ مجید کی ایک ہی سورۃ میں بیان ہوا ہے اور آخر کی چند آیات کے علاوہ باقی تمام آیتیں اس قصے سے مختص ہیں سورۃ یوسف کا حدف مخلص بندوں پر اللہ کی ولا یت اور انہیں مشکل حالات میں عزت کے کمال تک پہنچانا ہے

ذہن میں رہے کہ حضور ِ اکرم ﷺ مکہ مکرمہ میں تھے جب آپ ﷺ کی نبوت کا چرچہ مکہ سے مدینہ منورہ ہو ا تو مدینہ منورہ کے یہودی حسد کی آ گ میں جلنے لگے اور خوب سمجھتے تھے کہ اس نبی کا دائرہ نبوت بہت وسیع ہے اور آپ نے مکہ مکرمہ کے بعد مدینہ منورہ آنا ہے تو انہوں نے طرح طرح کی شرارتیں شروع کیں۔

Leave a Comment