روزے کی اہمیت اور فضیلت احادیث کی روشنی میں۔

روزے کی فضیلت و اہمیت دیگر عبادات کے مقابلے میں کئی گنا زیادہ اور بے حساب ہے اس طرح ہے کہ انسان کے ہر نیک کام کا بدلہ دس سے سات سو گنا تک دیا جاتا ہے جبکہ روزہ کا اجر خود اﷲتعالیٰ عطا کرے گا۔

حدیث قدسی میں ہے کہ اﷲتعالیٰ فرماتا ہے ’’ابن آدم کا ہر عمل اس کے لئے ہے سوائے روزے کے۔ پس یہ (روزہ) میرے لیے ہے اور میں ہی اس کا اجر دوں گا۔روزہ دار کو اللہ تعالیٰ کی طرف سے بے انتہا اجرو ثواب کے ساتھ ساتھ کئی خوشیاں بھی ملیں گی۔ حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا’روزہ دار کے لئے دو خوشیاں ہیں جن سے اسے فرحت ہوتی ہے : افطار کرے تو خوش ہوتا ہے۔

اور جب اپنے رب سے ملے گا تو روزہ کے باعث خوش ہوگا۔نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم رمضان سے پہلے اپنے ساتھیوں کو اس کی برکتوں سے فائدہ اٹھانے کے لئے تیار کرتے تھے اسوہ کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے جتنی بھی ہمیں تعلیمات ملتی ہیں کہ ہم رمضان گزاریں کیسے ؟

اس پر روشنی ڈالتے ہوئے سینئیر اینکر مبشر لقمان کا کہنا تھا کہ رمضان المبارک سے پہلے یا بعد میں فجر کے بعد دو گھٹری تنہا بیٹھ جائیں اور رمضان المبارک کو زیادہ سے زیادہ مفید بنانے کا منصوبہ بنائیں دو رکعت نماز پڑھ کے اس منصوبے کو عملی صورت دینے کے لئے اللہ تعالی کی مدد مانگیں روزانہ کم از کم تین آیات ترجمعہ کے ساتھ سمجھ کر پڑھیں اور تین اچھی عادات اپنائیں تین بُری عادات کو ترک کرنے کی کوشش کریں۔

نہ صرف رمضان میں بلکہ بعد میں بھی ان کو جاری رکھیںاللہ تعالی نے کہا کہ روزے کا بنیادی مقصد تقوی یعنی گناہوں سے اجتناب قرار دیا ہے مبشر رمضآن نے کہا آئیں رمضان المبارک کے مقد س مہینے کی برکتیں اور رحمتیں سمیٹیں سحر کی وقت بہت قیمتی ہے حدیث نبوی کے مطابق سال بھر رات کے آکری حصے میں اللہ تعالی بندوں کو پکارتا ہے ہے کویہ حاجت روا میں اس کی حاجت پوری کروں ہے کوئی مغفرت مانگنے والا میں اس کو بخش دوں

رمضان المبارک کی اہمیت اور فضیلت کے بارے میں بتاتے ہوئے اور اس بابرکت مہینے کی مقدس ساعتوں کی فضیلت سمیٹنے کا طریقہ بتایا کہا کہ سحری ٹائم جلدی اٹھیں اور تہجد کے نفل پڑھیں اللہ سے مغفرت صحت اور عافیت مانگیں دنیا کی ہر نعمت اوپر سے ہی ملنی ہے۔

تینوں عشروں کی دعائیں بکثرت پڑھیں کچھ نئی مسنون دعائیں یاد کریں شب قدر میں عبادت کا اہتمام کریں اعتکاف بیٹھنے کی کوشش کریں اللہ کی راہ میں زیادہ سے زیادہ پیسے خرچ کرنے کی کوشش کریں نبی پاک صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے اس مہینے کو ہمدردی کا مہینہ قرار دیا ہے

لہذا انسانوں کی زیادہ سے زیادہ خدمت کریں اور ان کے دکھ درد میں شریک ہوں بھوکوں کو کھانا کھلائیں مریضوں کا علاج و عیادت یتیموں اور بیواؤں کی خبر گیری محتاجوں کی حاجت روائی اللہ کے پسندیدہ پہلو ہیں۔

Leave a Comment