افطاری سے پہلے یہ ضرور سننا۔ رمضان کے بارے میں اللہ نے موسیٰ ؑ کو ایسا کیا کہا؟ حضرت موسیٰؑ حیران ہو گئے

ایک مر تبہ اللہ تعالیٰ کے نبی حضرت موسی ٰ کلیم اللہ اللہ سے مخاطب ہو کر عرض کرنے لگے اے میرے اللہ میں اس وقت آپ کے سب سے زیادہ قریب ہوں آپ سے ہم کلام ہوں آپ کا نبی ہو ں لیکن کیا مجھ سے بھی زیادہ قریب آپ کے ہو گا؟

بس۔ یہ کہنا تھا۔ تو اللہ نے فر ما یا اے موسیٰ ؑ یاد رکھو جب آخری پیغمبر میرا محبوب حضرت محمد مصطفیٰ ﷺتبلیغ ِ حق کے لیے اس زمین پر آ ئیں گے ان کی امت جب رمضان کے مہینے میں میرے لیے روزہ رکھے گی بھوکا رہے۔

گی اور جب افطاری کا وقت قریب آ نے لگے گا ان کی زبان خشک ہونے لگے گی بھوک ان کو ستانے لگے گی اس وقت وہ میرے سب سے زیادہ قریب ہوں گے اے موسی تمہارے اور میرے درمیان ستر پردوں کا فاصلہ ہے لیکن اس وقت جب میرے محبوب کی امت پورا دن بھوکا رہ کے افطار کر رہی ہوگی اس وقت ان میرے بندوں اور میرے درمیان کچھ فاصلہ نہیں رہے گا

اس وقت جو میرے بندے مجھ سے مانگیں گے میں انہیں عطا کر دوں گا اے موسیٰ اگر میرے بندوں کو معلوم ہو جا ئے کہ رمضان کیا ہے؟ تو میرے بندے صرف یہ تمنا کر تے کہ کاش پورا سال رمضان ہی ہو تا۔

Leave a Comment