اگر روزے کی حالت میں ا ح ت ل ا م ہو جا ئے تو کیا روزہ ٹوٹ جا تا ہے؟

ایک سوال ہے جو بہت سارے بھا ئیوں نے پو چھا کہ کیا ا ح ت ل ا م ہو جا نے کی صورت میں روزہ ٹوٹ جا تا ہے؟ میرے بھائیو اور میری بہنو۔ پیارے پیغمبر جناب ِ محمد ﷺ کی جو تعلیمات ہیں اس کے مطا بق اگر ا ح ت ل ا م ہو جا ئے تو ا ح ت ل ا م ہونے کی صورت میں روزہ نہیں ٹوٹتا۔ البتہ ہم پہ جو غسل ہے وہ فرض ہو جا تا ہے جب ا ح ت ل ا م ہو جا ئے اور ا ح ت ل ا م کا ہو نا انسان کے اپنے اختیار میں نہیں ہے جب انسان سوتا ہے اور خواب کی حالت میں یا بنا خواب کے آپ کا جو بدن ہے اس میں سے منی کا اخراج ہو جا نا اب بہت سارے بھائیوں نے مجھ سے کہا کہ ڈاکٹر صاحب ہم نے تو یہ سنا ہے۔

کہ جو بندہ روزے کی حالت میں اپنے بدن سے منی نکالتا ہے تو ا س سے روزہ ٹوٹ جا تا ہے میرے بھا ئیو۔ سونے کی حالت میں جو منی ہمارے بدن سے نکلتی ہے وہ ہمارے اختیار میں نہیں ہے۔ وہ تو خواب کی صورت میں یا بنا خواب کی صورت میں جو منی نکل گئی جو آپ نے اپنے ہاتھ سے یا اپنی شہ وت سے یا آپ نے اپنے کسی ایسے عمل سے رگڑ سے اس منی کو نہیں نکا لا بلکہ آپ سوئے ہو ئے تھے آپ خواب کی حالت میں تھے آپ نیند کی حالت میں تھے اس نیند کی حالت میں جو منی نکل جا تی ہے۔

ایسی حالت میں روزہ نہیں ٹوٹتا۔ صرف ایسی حالت میں ہمیں غسل کر نا فرض ہو تا ہے میرے بھا ئیو اگر ہم اپنی منی کو اپنے ہاتھ سے نکالتے ہیں یا رگڑ کے سوتے ہو ئے اپنے اعضاء تناسل میں رگڑ پیدا کر کے اس سے اپنی منی کو خارج کر تے ہیں جان بو جھ کر اپنی منی کا جو اخراج کر نا ہے میرے بھا ئیو اس سے روزہ ٹوٹتا ہے وہ خود بخود نیند کی حالت میں اگر یہ عمل ہو گیا تو ایسی حالت میں روزہ نہیں ٹوٹتا اور نہ ہی اس روزے کی کو ئی قضاء ہو تی ہے۔

جب روزہ ٹوٹا ہی نہیں تو اس کی قضا ء کیسے ہو گی ہمیں اپنے بچوں کی تر بیت کر نی ہے انہیں بتلا نا ہے کہ کس حالت میں روزہ ٹوٹتا ہے اور کس حالت میں روزہ نہیں ٹوٹتا ۔ خواب کی صورت میں اگر انضال ہو جا تا ہے تو ایسی صورت میں روزہ نہیں ٹوٹتا اللہ سے ہم دعا کر تے ہیں اللہ تعالیٰ ہمیں دین کو اسی منہج میں اسی نہج میں اسی طریقے پہ اسی سنت پہ سمجھنے والا سمجھ کے عمل کرنے والا اور عمل کر کے اس پیغام کو ساری کائنات ِ انسانوں تک پہنچانے والا بنا ئے۔