قرآن کا سب سے افضل حصہ کونسا ہے ؟

نبی ﷺ کسی سفر میں تھے تو ایک آدمی آپ کے پاس آیا کہتا ہے کہ نبی ﷺ نے اس کی طرف متوجہ ہوکر فرمایا کیا میں تمہیں قرآن کے افضل حصے کے بارے میں نہ بتاؤں پھر آپﷺ نے اس پر الحمد للہ رب العالمین کی تلاوت کی اس جیسی سورت نہ تورات میں نازل ہوئی نہ انجیل میں یہ سبع مثانی ہے

اور اللہ تعالیٰ فرماتے ہیں کہ یہی سورت میرے اور میرے بندے کے درمیان تقسیم شدہ ہے اور میرے بندے کو وہی ملے گا جو وہ مانگے گا تووہ کیا مانگتا ہے ایاک نعبد وایاک نستعین اللہ کی مدد مانگتا ہے جو بھی مشکل اس کو پیش آئی ہو حدیث میں یہ بھی آتا ہے جب بھی آپ ان دونون میں سے یعنی سورۃ الفاتحہ اور البقرہ کی آخری آیات میں سے کوئی دعائیہ جملہ پڑھیں گے تو آپ کو مانگی ہوئی چیز ضرور عطا کی جائے گی

جیسے اھدنا الصراط المستقیم یا غفرانک یا ربنا ولا تحملنا مالا طاقت لنا بہ بیمار جب ہوتا ہے انسان تو اپنے اوپر بھی بوجھ بن جاتا ہے اور دوسروں پر بھی اور کچھ کام نہیں کرسکتا

تو اس وقت انسان جب آخری آیتیں پڑھ کر دم کرتا ہے تو کیا مطلب ہے ان کا کہ اللہ ہم سے ایسا بوجھ نہ اٹھوانا جو ہم اٹھا نہیں سکتے تو سورت فاتحہ مؤثر رقیہ ہے لیکن اس کے لئے خلوص اور سچائی کے ساتھ سمجھ کر پڑھنا ضروری ہے اور بعض تجربہ کار اہل علم یہ کہتے ہیں کہ اگر اسے سات دفعہ پڑھا جائے تو پڑھنے والے کا نشانہ خطا نہیں جائے گا

یعنی سات دفعہ پڑھنا زیادہ فائدہ مند ہے بعض اوقات لوگ کہتے ہیں کہ ہم نے رقیہ بھی کرایا ہمیں فائدہ نہیں ہوا تو تین چیزیں راقم ہونا ضروری ہیں جس پر قرآن پڑھا جارہا ہو وہ مقام قرآن کو قبول کرنے والا ہو یعنی جس پر قرآن پڑھا جارہا ہو وہ قرآن کو قبول کرنے والا ہو یقین ہونا چاہئے اسکا کہ قرآن فائدہ دے گا

قرات کرنے والا مؤثر ہو اور جو پڑھا جارہا ہے وہ بھی مؤثر ہو یعنی اس کے مطابق ہو تو کبھی نہیں فائدہ ہوتا تو اس کی وجہ یہ نہیں کہ قرآن میں کوئی کمی ہے اس کی وجہ یہ ہے کہ یا تو قاری مؤثر نہیں ہوتا یا اس کا یقین پکا نہیں ہوتا

یا جس پر پڑھا جارہا ہے اس کو یقین نہیں ہوتا کہ اس سے مجھے کوئی فائدہ ہوگا تو اصل چیز یقین ہے جیسے اگر آپ کو کسی ڈاکٹر کی دوائی پر یقین نہیں ہوتا تو لے تولیتا ہے مجبوری کے مارے اور ساتھ ہی آپ سوچ رہے ہوتے ہیں کہ اس سے فائدہ نہیں ہوتا یہ اس نے پھر مجھے وہی لکھ دی ہے تو مجبوری کے تحت کھالی جاتی ہے

تو جب یہ شک جب آجاتا ہے تو پھر اچھی بھلی دعا یا دوا دونوں چیزیں فائدہ نہیں دیتی پھر ایمان کی کمزوری کےساتھ چیزیں فائدہ نہیں دیتی سورہ فاتحہ میں اللہ کے نام بھی ہیں توحید و آخرت کا ذکر بھی ہے مخلوق کی تین قسموں کا ذکر بھی ہے ۔اللہ ہم سب کا حامی وناصر ہو۔آمین

Leave a Comment