والدین کا حق ادا کرنے کی دعا

یہ ایک ایسا عمل ہے جو احادیث مبارکہ سے ہے جو کہ والدین کا حق ادا کرنے کی دعا ہے۔ جو بھی اس کو پڑ ھ لے گا۔ انشاء اللہ اللہ کے حکم والدین کا فرمانبردار لکھا جا ئے گا اور والدین کی فرما نبرداری میں شمار ہو گا۔ اور انشا ء اللہ ایسا ہو جائے گا کہ اس نے اپنے والدین کا حق ادا کر دیا ہے۔

انشا ء اللہ تعالیٰ اس کی مکمل روایت آپ کے ساتھ شئیر کروں گا۔ آج کا وظیفہ نہایت ہی آ سان ہے۔ جیسا کہ میں نے بتا یا ہے کہ حضور ﷺ نے فر ما یا کہ جو بھی یہ عمل کر لے گا ۔ تو انشا ء اللہ تعالیٰ ایسا ہو جائے گا کہ اس نے والدین کا حق ادا کر دیا۔ والدین کا فر ما نبراد شمار ہو گا۔ تو نہایت ہی آ سان سا عمل ہے۔

علامہ عینی نے شرح بخاری میں ایک حدیث نقل کی ہے کہ جو شخص ایک مرتبہ یہ دعا پڑھے اور اس کے بعد یہ دعا کرے کہ یا اللہ اس کا ثواب میرے والدین کو پہنچا دے تو اس نے والدین کا حق ادا کر دیا۔

دعا یہ ہے: الحمد للہِ رَبِ العٰلمین رب السموت ورب الا رض رب العلمین ولہ الکبر یا ء فی السمو ت والارض وھو العزیز الحکیم للہ الحمد رب السموت و ربا الا رض رب العلمین ولہ العظمتہ فی السمو ت والارض وھو العزیز الحکیم ھو الملک رب السموت ورب الارض رب العلمین ولہ النور فی السموت والارض وھو العزیز الحکیم ۔

یہ ایک ایسی دعا ہے انشاء اللہ تعالیٰ جب آپ اس کو پڑھ لیں گے تو اللہ کے حکم سے مذکورہ بالا دعا پڑھنے کے بعد فر ما یا گیا کہ یہ دعا کرے کہ یا اللہ اس کا ثواب ۔

اس کے بعد حدیث میں فر ما یا کہ اس کو اس دعا پڑ ھنے کے بعد یہ دعا کر ے کہ یا اللہ اس کا ثواب میرے والدین کو پہنچا دے ۔ جب اس نے ایسا کر دیا تو اس نے والدین کا حق ادا کر دیا اور فر ما یا کہ تین مرتبہ سورۃ اخلاص اور تین مرتبہ سورۃ الفتح اور تین مرتبہ درود شریف تو والدین کا فرمانبراد شمار ہو جا ئے گا۔

حدیث میں ہے کہ اگر کوئی آدمی نفع صدقہ کرے تو اس میں کیا حرج ہے کہ اس کا ثواب والدین کو بخش دیا کرے۔ شرط یہ ہے کہ اس کے والدین مسلمان ہوں۔ انشاء اللہ اس صورت میں اس وظیفے کا ثواب ان تک پہنچ جا ئے گا ۔ اور صدقہ کرنے والے کے ثواب میں بھی کوئی کمی واقع نہیں ہو گی۔ بہت ہی آ سان سا عمل ہے۔ کر نا آپ نے کیا ہے۔

اس دعا کو جو میں نے آپ سے ذکر کیا ہے پڑھنی ہے اور اس دعا کے بعد تین مرتبہ سورۃ اخلاص، تین مرتبہ سورۃ فاتح، اور تین مرتبہ درود شریف کو بھی شامل کر دینا ہے اور اس تمام کا ثواب اپنے والدین کو پہنچا دینا ہے۔