دل کے مریض 6 سنہری اُصول اپنا لیں۔

اس تحریر میں دل کے مریضوں کے لئے 6 سنہری اصول شیئر کررہے ہیں اگر آپ ان پر عمل کرلیں گے تو انشاء اللہ آپ کے دل کا مسئلہ پچاس سے ساٹھ فیصد تک حل ہوجائے گا اور وہ افراد جن کو دل کی بیماری لاحق نہیں ہے وہ بھی ان اصولوں پر عمل کریں ۔دل کے صحیح افعال کی علامت یہ ہے کہ آپ کو اس کی آہٹ قطعی محسوس نہ ہو اگر قلب کی حرکت میں کسی قسم کی بے ترتیبی ہوتی ہے جسے آپ محسوس کرلیتے ہیں تو سمجھ لیجئے کہ اس کے عمل میں کوئی خرابی ہورہی ہے

جن لوگوں کو بدقسمتی سے دل کا کوئی دورہ پڑچکا ہو وہ اسے فوری طور پر اور اچھی طرح سمجھتے ہیں اور جانتے ہیں اور نصف معالج کا درجہ بھی رکھتے ہیں وہ جانتے ہیں کہ قلب کو صحیح حالت میں رکھنے کے لئے کیا احتیاطی تدابیر اختیار کرنی چاہئیں قلب کے بعض مریضوں کو دل میں سخت دردسامحسوس ہوتا ہے اگرچہ ایسے امراض کی بہت سی دوائیں نکل آئی ہیں اور دل کے بڑے اچھے ماہر بھی پیداہوگئے ہیں تاہم معالج آپ کی اتنی مدد نہیں کرسکتا جتنی آپ خود کرسکتے ہیں

بعض مریض احتیاطی تدابیر کی مدد سے عمر طبعی کو پہنچنے سے کامیاب ہوجاتے ہیں دل کے مریضوں کے لئے چھ سنہری اصول بتائے جارہے ہیں انشاء اللہ آپ کو ضرور فائدہ ہوگا ۔ سب سے پہلے اپنے وزن پر نظررکھئے جسم پر چربی اچھی چیز نہیں ہے سیدھی بات یہ ہے کہ آپ کا جسم جتنا زیادہ فربہ ہوگا آپ کے قلب پر اتنا ہی زیادہ بار پڑے گا اگر دل کے کسی مریض کا وزن بڑھتا جارہا ہے تو اسے ضروری احتیاطی تدابیر لازمی کرنی چاہئیں۔

دل کے علاوہ دوسرے اعضاء بھی فربگی سے بری طرح متاثرہوتے ہیں اضافی چرپی پھیپھڑوں کی جھلی کے چاروں طرف جمع ہوجاتی ہے اور سانس لینے میں رکاوٹ پیداکرتی ہے جب سانس اچھی طرح نہیں آتا تو خون کی ضرورت اور آکسیجن میسر نہیں ہوتی اور اوہ گندگی سے پاک نہیں ہوتا خالص شہد کا کھانا امراض دل میں بہت مفید ہے اگر آپ کو مستقل طور پر قبض رہتی ہے تو کبھی کبھار ہلکا جلاب لینے میں کوئی حرج نہیں ہے۔

اس مقصد کے لئے کہ بعض دیسی جڑی بوٹیوں کو تیز اور خراش پیداکرنی والی دواؤں پر ترجیح دیجئے اپنی غذا میں سلاد اور دوسری کچی ترکاریاں افراط کے طور پر شامل کیجئے تا کہ آپ کو قبض نہ ہونے پائے مستقل قبض امراض دل کو بڑھانے معاون ثابت ہوتا ہے اگر آپ سگریٹ پیتے ہیں تو اسے قطعی طور پر ترک کردیجئے تمباکو کا استعمال امراض دل میں بہت ہی نقصان دہ اور مضر ثابت ہوتا ہے اپنے جسم کی طاقت کے مطابق ہرروز تھوڑی بہت ضرور ورزش کیجئے ساتھ ساتھ جسم کو آرام بھی خوب دیجئے۔

اپنی نیند میں ہرگز بھی کمی نہ آنے دیجئے امراض قلب میں شراب نوشی اور نشہ آور اشیاء کا استعمال نہایت مضرہوتا ہے ان سب سے اجتناب بہت ضروری ہے شکر اور نمک کھانا بھی کم کردیجئے ۔ہم لوگ نفسیاتی طور پر سادہ اور سستے علاج کی تاثیر کے قائل نہیں ہوتے لیکن یہی علاج اکثر اوقات مفید ثابت ہوتا ہے مثلا پانی پینا اور شہد کا کھانا بظاہر معمولی بات ہے مگر پابندی سے اسے کھاتے رہنے سے بہت سی بیماریوں سے افاقہ محسوس ہوتا ہے سادہ پانی کے بھی بہت سے فائدے ہیں سادہ پانی دردسینہ یعنی انجائنا کے مریضوں کے لئے خاص طور پر مفید ہوتا ہے گرم پانی سے خون کی شریانیں کھل جاتی ہیں اور مریض کو درد میں افاقہ محسوس ہوتا ہے

اس کا مطلب یہ نہیں کہ مریض کو گرم پانی کے ٹب میں بٹھادیا جائے اس طرح بلڈ پریشر بڑھ جائے گا البتہ مریض کی کلائیوں تک اس کے ہاتھ گرم پانی میں ڈبوئے جاسکتے ہیں اس طرح خون کی شریانیں کھل جاتی ہیں اور درد سینہ میں بھی کافی حد تک کمی ہوجاتی ہے امراض دل کے مریضوں کے لئے آرام بہت ضروری ہے ہائی بلڈ پریشر کے مریض تجربہ کریں گے کہ لیٹنے سے خون کا دباؤ کم ہوجاتا ہے اس طرح بہت سی توانائی بچ جائے گی اگرمریض کو یکایک دل میں درد محسوس ہوتو وہ فوراس بستر پر دراز ہوجائے۔

اگر سر چکرانا شروع ہوتو تب بھی یہی ترکیب کرنی چاہئے اس طرح قلب بے جا بار سے بچ جاتا ہے اور اسے ضروری آرام مل جاتا ہے دل کے کسی دورے یا درد سینہ کے بعد شفاء یاب ہونے کے دوران مختصر فاقہ نہایت مفید ہوتا ہے اس قسم کی کسی بھی تکلیف کے بعد آپ کو محسوس ہوگا کہ آپ کی بھوک کم ہوگئی ہے یہ فطری تقاضوں کے عین مطابق ہے کہ کمزوری کے عالم میں آپ کے معدے پر زیادہ بار نہ پڑے فاقے کا مطلب یہ نہیں ہے کہ گوشت کی بجائے مچھلی کھا لی جائے فاقے کا مطلب یہ ہے کہ ہر قسم کی ٹھوس غذا سے مکمل اجتناب کیاجائے۔

فاقے کے دوران سادہ پانی یا پھلوں کے پتلے رس کی اجازت دی جاسکتی ہے کمزور مریض کو شروع میں ایک دن کا افاقہ بھی نہایت تکلیف دہ اور ناگوار محسوس ہوگا اگر ایسا محسوس ہوتو اسے ناشتے پر تھوڑی سی کشمش کھالینی چاہئے اس طرح دوپہر اور شام کے وقت بھی کچھ کشمش کھائی جاسکتی ہے اس کے سا تھ بعض پھلوں کا رس بھی دیا جاسکتا ہے لیکن اس میں پانی کی مقدار وافر ہونی چاہئے۔

Leave a Comment