ایک ولی اللہ اور گدھے کا قصہ۔

ایک صاحب شدید مالی تنگی کا شکار تھے کھانا پینا تو خیر پورا ہو جایا کرتا تھا مگر رہائش کی سخت پریشانی تھے اللہ والے بزرگ سے بہت ہی پختہ عقیدہ رکھتے تھے حالات سے تنگ ہو کر ان کی خدمت میں حاضر ہوئے اور عرض کیا کہ حضرت بہت ہی تکلیف میں ہوں بہت پریشانی ہے بس ایک کمرے کا گھر ہے اس میں خود میں رہتا ہوں میری بیوی اور چار بچے بھی ساتھ ہی ووٹ ڈالتا اور بہنیں بھی ساتھ ہیں ہیں اور خاندان کی ایک بڑی رشتہ دار بہ خاتون جو کہ میرے ہی زیر کفالت ہے وہ بھی میرے ساتھ ہے کہ اتنے سارے افراد اور حضور ایک کمرہ بہت سخت پریشان یہ کہتے ہوئے اس شخص کی آنکھوں سے آنسو بار بار چل رہے تھے۔

بزرگوں نے گردن جھکائی ہوئی تھی اور کیا اور فرمایا تمہارا مسئلہ حل ہوجائے گا کرو ایک مرغی لے آؤ اور اسے بھی اپنے ساتھ اپنے کمرے میں رکھ دوں وہ خوشی خوشی اپنے گھر گیا اور گھر جاتے ہوئے راستے سے اس نے موڑ لیا اور اسے اپنے کمرے میں رکھ لیا پاس وہ شخص دوبارہ حاضر ہوتا ہے اور پہلے سے زیادہ غمزدہ اور دکھائی دیتا ہے

حضرت مصلح بالکل بھی تو اور زیادہ بڑھ گیا ہے کیا مرغا شور مچاتا ہے حضور اور گندگی پھیلاتا ہے بزرگوں نے گردن جھکائی ہوئی تھی تھوڑا سا سوچا اور پھر فرمانے لگے اب میں سمجھا تمہارا مسئلہ تھوڑا سا اور پکڑا ہوا ہے۔

اور تم ایسا کرو کہ ایک بکرا لے آؤ اور اسے اپنے ساتھ اپنے کمرے میں رکھا اور ایک ہفتے بعد آ کر پھر مجھے اطلاع وہ شخص دوبارہ جب حاضر ہوا تو پریشانی سے کانپ رہا تھا رنگ پوری ہوئی تھی اور آ کر کہنے لگا یا حضرت مصلحتوں اور گھمبیر ہوگیا ہے بکرا پیشاب کرتا ہے اور جگہ جگہ نے بھی کررہا ہے نیند ٹھیک طرح سے نہیں آتی اور نماز پڑھنے والی جگہ پہ لیٹ ہو رہی ہے تو پھر اور کیا اور فرمایا اچھا اچھا اچھا اچھا تمہارا مسئلہ کیا ہے تم ایسا کرو یہ گدھا لے آؤ اور غصہ بھی اپنے کمرے میں اپنے ساتھ رکھو

اور یہ ہفتے بعد اگر مجھے پھر اطلاع دو ایک ہفتے بعد جب پیارے دوستو وہ شخص ان بزرگوں کے پاس آیا لگتا تھا کہ غم اور پریشانی سے اب بھی فوت ہو جائے گا آنسو اس کی آنکھوں سے برس رہے تھے جیسے ساون کی جھڑی اور وہ اس ہو چکا تھا آیا اور بولا یا خضرت اب تو اس قدر پریشانی ہو گئی ہے کہ زندگی سے تم بتا چکا ہوں۔

اس گدھے تو حضور ہمارے گھر والوں کا جینا کیا وہ محلے کا جینا حرام کردیا ہے ہے تو بزرگوں نے فرمایا اچھا یار یہ تو باقی کام خراب ہوتا جا رہا ہے اور جب تم ایسا کرو کہ آپ اپنے گھر سے نہ مرغا نکال دو اور ہفتے بعد آکر پھر مجھے اطلاع دو وہ حالات میں بہتری ہوئی ہے تو اچھا پھر ایسا کرو کہ اگر ملک کے نکالنے سے ذرا بہتری آئی ہے تو اب تم بکرا نکال دو اور پھر آگے آگے مجھے پھر بتا دو نے آ کر بتایا کہ حضور عبداللہ کا بہت کرم ہے جی حالات کافی بہتر ہو گئے۔

Leave a Comment