وہ صورتیں جن میں روزہ واجب نہ ہونے یا فاسد ہوجانے کے باوجود کھانا پینا منع ہے؟

آج آپکو وہ سورتیں بتائیں گے جن میں روزہ واجب نہ ہونے یا فاسد ہوجانے کے باوجود کھانا پینا منع ہے؟ کسی نے رات کے گمان میں سحری کھائی حالانکہ صبح ہوچکی تھی۔ یا غروب کے گمان میں افطار کرلیا۔ حالانکہ دن ابھی باقی تھا۔ جب مسافر دن میں سفر سے لوٹ آیا ۔ جو عورت دن میں ح۔یض و نفا س سے پاک ہوگئی۔

یا مج۔ن۔ون کو دن میں افاقہ ہوگیا۔ یا کسی کاروزہ ٹوٹ گیا۔ خواہ جبراً تڑوایا گیا ہو۔ یا غلطی سے ۔ پانی وغیرہ حلق میں اتر گیا۔ جب کافر دن میں مسلمان ہوگیا۔ جب نابالغ بالغ ہوگیا۔ تو ان تمام صورتوں میں دن کا بقیہ حصہ بغیر کھائے پیے روزہ داروں کی طرح گزارنا واجب ہے۔ اورآخر دو شخصو ں کے سوا بقیہ تمام لوگوں پر اس روزہ کی قضا واجب ہے۔

اگر بچے بلو غ کےبعد نصف النہار سے پہلے روزے کی نیت کرلی ۔ جبکہ ابھی تک کچھ کھایا پیا نہ ہو۔تواس کا نفلی روزہ ہوجائےگا۔ عورت صبح صادق کےبعد پاک ہوکر روزے کی نیت کرلیے۔ یا کافر مسلمان ہونے کے بعد نیت کرلے۔ تو اس کا روزہ نہ ہوگا۔ نہ فرض نہ نفل۔ وہ چیزیں جس سے روزہ ٹوٹ جاتا ہے۔

روزہ یاد تھا۔ مگر کلی کرتے ہوئے ناک میں پانی چڑھاتے ہوئے ، بے اختیا ر کچھ پانی حلق سے اتر جائے تو روزہ ٹوٹ جاتا ہے۔

Leave a Comment