سبز مرچ کے بیج گوند میں دال کر اس عمل کو کریں مکمل شرارتی ایک گروپ جو کسی ایک خاندان کا دشمن بن گیا ہو اس گروپ کو توڑنے والا نوری عمل

کہ دہشت گرد جس طرح بلا امتیازِ مرد و زن، بازاروں، شہروں، عبادت گاہوں اور دیگر عوامی مقامات پر بم دھماکوں اور خودکش حملوں کے ذریعے انسانیت کے ق ت ل عام کے مرتکب ہو رہے ہیں کیا حالتِ ج ن گ میں بھی ایسے اقدامات کی اسلام اجازت دیتا ہے؟ارشادِ باری تعالیٰ میں صراحتاً یہ حکم دیا جا رہا ہے کہ کسی قوم، گروہ یا ملک کی دشمنی میں بھی مسلمانوں کو عدل ترک کرنے اور ظلم اختیار کرنے کی اجازت نہیں. امام قرطبی اس آیت کی تفسیر میں بیان کرتے ہیں کہ نصِ قرآنی سے یہ ثابت ہے کہ اسلام ہر حال میں اعتدال اور میانہ روی کے راستہ کو اختیار کرنے کا حکم دیتا ہے۔اب ہم اپنے وظیفے تحریر کرتے ہیں عمل یہ ہے کہ سبز مرچ کے بیچ ایک چمچ لیجئے اور گوند بھی دو چمچ کے قریب لے لیجئے اور اس پر یہ آیت : والقینا بینھم العداوۃ والبغضاء الی یوم القیامۃ کو 33 مرتبہ پڑھئے اور اس پر دم کر دیجئے اور وہ لوگ جو آپ کے دشمن ہیں اور آپ ان کے گروہ کو توڑنا چاہتے ہیں ان کے بارے میں تصور کیجئے اور اس گوند کو چولہے پر رکھ کر چولہا جلا دیجئے جیسے جیسے یہ جلے گا تو ان لوگوں میں نفرت پیدا ہوگی اور وہ آپ سے دور ہوجائیں گے اور آپس میں ہی لڑتے مرتے رہیں گے ۔اللہ ہم سب کاحامی و ناصر ہو۔آمین

Leave a Comment