امام علی ؑ کا اہم بیان: انسان کے دل پر راج کرنے کا آسان عمل

ایک مرتبہ ایک شخص حضرت امام علیؑ کی خدمت میں آیا اور دستِ ادب کو جوڑ کر عرض کرنے لگا یا علی ؓ میں چاہتا ہوں کہ میں لوگوں کے دلوں پر راج کرو تو میں ایساکیا کروں بس یہ کہنا تھا تو امام علی ؑ نے فرمایا اے شخص میں نے اللہ کے رسول سے سنا جو شخص دلوں پر راج کرنا چاہتا ہے تو وہ انسانوں پر احسان کرنا سیکھے

جیسے جیسے تم لوگوں پر احسان کرتے جاؤ گے لوگوں کے دلوں پر تم راج کرتے رہو گے تو اس نے کہا یا علی میرے دامن میں اتنی وسعت نہیں کہ میں کسی پر احسان کروں امام علی ؑ نے فرمایا اے شخص جب تم نیند سے اٹھو تو صبح سے لے کر رات تک ایک وعدہ کرو اس نے کہا یا علی کونسا وعدہ

امام علیؑ نے فرمایا اپنے رب سے وعدہ کرو کہ صبح سے لے کر رات تک میں جس جس کو دیکھوں گا جس جس سے ملوں گا اس کو دیکھ کر مسکراؤں گا اس لئے نہیں کہ وہ مجھے اچھا لگتا ہے یا برا بلکہ اس لئے کہ وہ تیرا بندہ ہے جب تم روز اللہ سے یہ وعدہ کر کے اپنے دن کا آغاز کرو گے

تو اللہ پاک کے فضل و کرم سے اللہ تمہیں ایسا بنا دے گا کہ تم ہر انسان کے دل پر راج کرو گے ۔مسکراہٹ دائمی کیفیت کا نام ہے، (اسے ہلکی پھلکی ہنسی کا نام بھی دیا جاسکتا ہے)جبکہ ہنسی عارضی حالت ہوتی ہے۔ مسکراہٹ ، خوشی پر فطری ردعمل کا دوسرا نام ہے جبکہ ہنسی بسا اوقات دردناک حادثے پر رد عمل کا بھی نتیجہ ہوتی ہے۔ مسکراہٹ اندرونی خوشی اور سکون کی علامت ہوتی ہے جبکہ ہنسی کسی ہنگامی ناگہانی حالت کا نتیجہ ہوتی ہے۔

مسکراہٹ کا اثر دیر تک باقی رہتا ہے جبکہ ہنسی کا اثر جلد زائل ہوجاتا ہے۔مسکراہٹ تواضع و انکساری کی دلیل ہے جبکہ ہنسی اگر قہقہے کے ساتھ ہو تو غرور کی نشانی مانی جاتی ہے۔ مسکراہٹ ہنسی سے زیادہ مشکل کام ہے۔مسکراہٹ مختلف قسم کے لوگوں ،مختلف طبیعتوں اور مختلف المزاج افراد سے میل ملاپ کے وقت آتی ہے۔

جبکہ ہنسی انتہائی بے تکلف قسم کے لوگوں کے ساتھ ہی نمودار ہوتی ہے۔ مسکراہٹ میں ایک ادب شامل ہوتا ہے جبکہ ہنسی ادب کے دائرے سے خارج بھی ہوجاتی ہے۔ تازہ ترین جائزے میں بتایا گیا ہے کہ خوشی کا احساس انسان کو دل کے دورے، دل کے امراض ،ہارٹ اٹیک اور ذیابیطس کی تکلیف سے بچاتا ہے۔ خوشی کا احساس ، مٹاپے اور عقل کے مختلف امراض سے محفوظ رکھتا ہے۔ خوشی کا احساس عام طور پر عمر میں اضافہ کردیتا ہے۔

اس کا سبب معمولی ہے ، سبب یہ ہے کہ خوش رہنے والے لوگ 2اہم ہارمونز کم مقدار میں خارج کرتے ہیں ۔ اچھی مسکراہٹ کے فائد ے: اچھی مسکراہٹ صحت بخش ہوتی ہے۔ یہ انسان کی ذہنی، جسمانی اوراعصابی صحت کی حفاظت کرتی ہے۔ صحت بخش مسکراہٹ ، بلڈ پریشر کم کرنے میں معاون بنتی ہے۔مسکراہٹ دوران خون تیز کرتی ہے۔

مسکراہٹ ،ذہنی و سماجی دباؤ کیخلاف جسم میں مدافعتی نظام کو تقویت پہنچاتی ہے۔مسکراہٹ کی بدولت دل ، دماغ اور جسم کی کارکردگی پر خوشگوار اثر پڑتے ہیں۔ مسکرانے والے انسان کی نبض متوازن شکل میں چلتی ہے۔مسکراہٹ ، انسان کے لاشعور تک سکون اور اطمینان کی لہر پہنچا دیتی ہے۔ مسکراہٹ ، چہرے کو خوبصورت اور پررونق بنا دیتی ہے۔

مسکراہٹ ایک طرح سے عصری امراض سے بچاؤ کا بہترین علاج ہے۔ مسکراہٹ، بے چینی اور ڈپریشن سے تحفظ دیتی ہے۔ مسکراہٹ، مختلف قسم کے درد کا علاج ہے۔ مسکراہٹ، بے خوابی اور بے چینی پر قابوپالیتی ہے۔ اطباء کہتے ہیں کہ مسکراہٹ اور ہلکی پھلکی ہنسی ،صنفی صلاحیت کو بہتر بناتی ہے۔

شریانوں کے تناؤ کو ہلکا کرتی ہے، نبض کی رفتار کودرست کردیتی ہے۔ عضلات کو آرام دہ حالت میں لے آتی ہے۔اللہ ہم سب کا حامی وناصر ہو۔آمین