ایک شخص کسی پرائیویٹ کمپنی میں جاب کرتا تھا

ایک شخص کسی پرائیویٹ کمپنی میں جاب کرتا تھا وہ اپنی زندگی سے خوش نہیں تھا ہر وقت وہ کسی نہ کسی پریشانی سے اداس رہتا ایک دن اس کے دوست نے اس کی پریشانی دیکھی اور بولا کے فلاں جگہ ایک بزرگ رهتے ہیں بہت سے مسائل میں اس بزرگ نے مدد کی ہے تم بھی اس کے پاس جاؤ مجھے امید ہے کہ وہ بزرگ تمہیں تمہارے مسائل کا حل ضرور بتائیں گے

اس نے کہا ہاں ٹھیک ہے میں کل اس کے پاس جاؤں گا اگلے دن وہ شخص جاب سے چھٹی کے بعد شام کو اس بزرگ کے پاس گیا ان کے پاس جا کے بولا بابا جی ہر وقت کوئی نہ کوئی پریشانی نے مجھے گھیرا ہوتا ہے کبھی آفس کی پریشانی کبھی گھر کے مسائل میں بہت تنگ آ چکا ہوں

ہر وقت ذہن پریشان سا رہتا ہے مجھے کچھ ایسا بتائیں کہ ہر پریشانی ختم ہو جائے بابا جی کہتے ہیں کہ اب تو بہت دیر ہو چکی ہے شام ہو گئ ہے میں تمہارے مسائل کا جواب کل ضرور دون گا لیکن تمہیں میرا ایک کام کرنا ہوگا میرے پاس سو اونٹ ہیں میں چاہتا ہوں

آج رات تم ان کا خیال رکھو جب پورے ١٠٠ اونٹ بیٹھ جائیں تو تم بھی سو جانا وہ بولا ہاں ٹھیک ہے رات ہو گئ بابا جی سو گئے اور وہ شخص اونٹوں کا خیال رکھنے لگا جب صبح ہوگئ تو بابا جی نے پوچھا بیٹا تمہیں کیسی نیند آئی تو وہ بہت دکھی ہو کر بولا کہ میں تو ایک پل بھی نہیں سو سکا میں نے بہت کوشش کی کہ سب ہی اونٹوں کو بیٹھا لوں اور پھر سکون سے سو جاؤں

لیکن ایسا نہ ہو سکا ادھر ایک اونٹ کو بیٹھا رہا ہوں تو دوسری طرف پھر کوئی نہ کوئی کھڑا ہو جاتا ہے اسی طرح ساری رات گزر گئ بابا جی کہنے لگے جس طرح تم ایک طرف اونٹ کو بیٹھاتے

اور دوسری طرف کوئی نہ کوئی کھڑا ہو جاتا تھا بالکل اسی طرح ہی ہماری زندگی کے مسائل ہیں اسی طرح تم ایک مسئلے سے نکلو گے تو کوئی دوسرا مسئلہ کھڑا ہو جائے گا یہ ہماری زندگی کا وہ حصہ ہیں جنہیں ہم اپنی زندگی سے نہیں نکال سکتے تو پھر اس شخص نے پوچھا کہ مجھے کیا کرنا چاہئیے اس بزرگ نے مسکرا کر بولا کہ ان مسائل کے باوجود ہنس کر جینا سیکھو جس طرح کل کی رات گزر گئ

لیکن تم سو نہ سکے اگر آج بھی کوشش کرو گے تو ١٠٠ کے ١٠٠ اونٹ نہیں بیٹھیں گے اسی طرح ساری زندگی کوشش کرو گے تو سو نہ سکو گے وہ شخص بزرگ کی بات اچھے سے سمجھ گیا

اس کے ذہن کو تھوڑا سکون ملا وہ سمجھ گیا کہ پرشانیاں زندگی کا حصہ ہیں ان کے باوجود بھی چین سے رہنا ہے حضرت علی نے فرمایاکہ پریشانی حالات سے نہیں بلکہ خیالات سے آتی ہیں