شہادت کی انگلی لگاتے ہی آنکھوں کی بیماری کا فوری علاج

آج کے دور میں کمپیوٹر اور موبائل کا جتنا زیادہ استعمال ہورہاہے۔ اتنا ہی زیادہ آنکھوں کے مسائل بڑھتے جارہے ہیں۔ اس کے لیے ایک ایسا عمل ہے جس کو کرنے سے آنکھوں کے مسائل کو دور کیا جاسکتا ہے۔ یہ عمل خاص اور مجر ب ہے۔ اس بات میں کوئی شک نہیں کہ لیپ ٹاپ ، ٹیبلٹ ، سمارٹ فون، کمپیوٹر اورٹی وی نے ہماری آنکھوں کا ستیاناس کر کے رکھ دیا ہے۔

اس چھوٹے چھوٹے بچے بھی آنکھوں کے مسائل کا شکا رہیں۔ آنکھوں کی نئی نئی بیماریاں سامنے آرہی ہیں۔ جو کہ بڑے خطر ے کی علامت ہیں۔ آنکھیں اللہ تعالیٰ کی قدرتی نعمت ہیں۔ جس کی قدر کرنی چاہیے ۔ آنکھوں کی قدر ان سے پوچھیں جن کے پاس آنکھیں نہیں ہیں۔ جن کے پاس آنکھیں ہیں وہ اس کی قدر نہیں کرتے۔ہمیں چاہیے ہم اپنی آنکھوں کی حفاظت کریں۔

یہ عمل صبح کو اٹھ کر کرنا ہے۔ اور آپ نے اس عمل کو جاگنے کے فوراً باد کرنا ہے۔ عمل کرنے سےپہلے نہ ہی آپ نے کلی کرنی ہے۔ نہ ہی ہاتھ اور منہ کو دھونا ہے۔ اگرآپ کو شک ہے کہ آپ کے ہاتھوں پر گندگی لگی ہوئی ہے۔ تو پھر اپنے ہاتھوں کو دھو سکتے ہیں۔لیکن کلی پھر بھی نہیں کرنی۔ ہاتھوں کو خشک کرکے اپنے بستر پر آکر بیٹھ جائیں۔ اب بستر پر بیٹھ کر آپ نے سات مرتبہ بسم اللہ پڑھ کر اپنی شہادت کی انگلیوں پر دم کرنا ہے۔

بسم اللہ کو پوری پڑھنا ہے۔ اب دم کرنے کے بعد دائیں انگلی پر اپنے لعاب کو اپنی دائیں آنکھ پر ملنا ہے۔ اور کوشش کریں جو لعاب لگایا ہے وہ آپ کی آنکھ کے اندر بھی جائے۔پھر اسی طرح آپ نے یہ عمل بائیں آنکھ پر بھی کرنا ہے۔ چاہیں تو بائیں ہاتھ سے لگائیں یا دائیں ہاتھ کی شہادت کی انگلی سے لگائیں۔

یہ عمل ایسا ہے کہ آپ پر حیرت انگیز اثرات مرتب ہوں گے۔ اس لیے وظیفے کر تے وقت اپنی آنکھوں کی کیفیت کو چیک کریں۔ اس عمل کو 41 دن کریں۔ ان اکتالیس دن کے بعد اپنی آنکھوں کی کیفیت کو چیک کریں۔آپ کو واضح فرق دکھائی دے گا۔ انشاءاللہ اگر آپ اس عمل کو دس یا بارہ دن بھی کریں گے تو آپ کو واضح فرق دکھائی دے گا۔

اگر دھندلہ پن ہے تو وہ ٹھیک ہوجائے گا۔ یا کوئی بھی بیمار ی ہو گی وہ ختم ہو جائےگی۔ یہ آنکھوں کا بہت مجر ب عمل ہے۔ اگر آپ کو خود کوئی آنکھوں کا مسئلہ ہے تو اس عمل کو شروع کریں۔ ہم میں سے بہت سے لوگ ایسے ہیں جو اپنی آنکھوں کا خیا ل نہیں رکھتے اور بڑھتی عمر کے ساتھ آنکھوں کے مسئلے کا شکار ہوجاتے ہیں

۔موجودہ دور کی آلودگی میں اضافہ ، جدید طرزِزندگی، ٹیلی ویژن اور موبائل فون اور کمپیوٹر پر پڑھنے کی عادت ، سورج کی شعاعیں اور گر د آلود کے علاوہ اور بہت سی چیزیں ہیں جو آنکھوں کی بیماری کا سبب بنتی ہیں۔ سبز پتوں والی غذائیں ، دودھ اور وٹامن والی اجزاء استعمال کریں۔ وٹامن اے آنکھوں کی حفاظت کے لیے بہترین سمجھا جاتا ہے۔

لہٰذا ایسی سبزیوں کا استعما ل کریں جن میں وٹامن اے پایا جائے۔اس کے علاوہ کاربوہائیڈریٹ، کیلشیم اور پروٹین بھی آنکھوں کی صحت کے لیے اہم ہیں۔ اپنی آنکھوں کو آلودگی اور گردوغبار سے بچائیں۔ایک تھکن دن گزارنے کے بعد آنکھوں کو ٹھنڈے پانی سے دھوئیں۔اس کے لیے عرقِ گلاب آنکھوں کی گردوغبار کے لیے بہت مفید ہے۔

آنکھوں کا باقاعدگی سے معائنہ کروائیں۔لیٹ کر پڑھنے سے آنکھوں پر اثر پڑتا ہے۔ ٹی وی کو تین میٹر کے فاصلے پر رکھ کر پڑھیں۔ سب سے اہم بات یہ ہے کہ اس وظیفے کو کریں اس سے آنکھوں کو بہت فائد ہ حاصل ہوگا۔

Leave a Comment