ہرحاجت 1 سیکنڈ کے اندر پوری ہوجائے گی۔

اس تحریر میں اللہ رب العزت کے پیارے سے صفاتی نام کا وظیفہ پیش کیاجارہا ہے صرف اور صرف ایک نام جس کو آپ نے صرف اتوار کے روز ورد کرنا ہو گا انشاء اللہ جس قسم کی بھی پریشانی ہوگی وہ دور ہوجائے گی اللہ رب العزت کی بارگاہ میں جب آپ اس سے سوال کریں گے اس نام کے وسیلے سے تو آپ کی پریشانی دور ہوجائے گی۔

یہ وظیفہ آپ نے اتوار کے دن کسی بھی وقت میں کر لینا ہے بنیادی طور پر اللہ رب العزت کے نام ہیں وہ اس کی وحدانیت کو بیان کرتے ہیں اور اس کی صفات کو بیان کرتے ہیں وہ ذات ہے جس کے سوا کوئی عبادت کے لائق نہیں وہ ہمیشہ زندہ رہنے والا ہے۔

سارے عالم کو اپنی تدبیر سے قائم رکھنے والا ہے نہ اس کو اونگھ آتی ہے نہ ہی نیند جو کچھ آسمانوں میں ہے اور جو کچھ زمین میں ہے سب اسی کا ہے کون ایسا شخص ہے جو اس کے حضور اس کے اذن کے بغیر سفارش کرسکے جو کچھ مخلوقات کے سامنے ہورہا ہے یا ہوچکا ہے وہ جو کچھ ان کے بعد ہونے والا ہے وہ سب جانتا ہے اور وہ اس کی معلومات میں سے کسی چیز کا بھی احاطہ نہیں کرسکتے

مگر جس قدر وہ چاہے اس کی کرسی یعنی سلطنت و قدرت تمام آسمانوں اور زمین کو محیط ہے اور اس پر ان دونوں یعنی آسمان اور زمین کی حفاظت ہر گز دشور نہیں وہ ہی سب سے بلند مرتبے والا بڑی عظمت والا ہے ۔اے حبیب یوں عرض کیجئے اے اللہ سلطنت کے مالک تو جسے چاہے سلطنت عطا فرمادے اور جس سے چاہے سلطنت چھین لے اور تو جسے چاہے عزت عطافرما اور جسے چاہے ذلت دے ساری بھلائی تیری ہی دست قدرت میں ہے بے شک تو ہر چیز پر بڑی قدرت والا ہے

اسی طرح قرآن کریم میں ارشاد ہوتا ہے :یہ وہ لوگ ہیں جنہوں نے لوگوں سے کہا مخالف لوگ تمہارے مقابلے کے لئے بڑی کثرت سے جمع ہوچکے ہیں سو ان سے ڈرو تو اس بات نے ان کے ایمان کو اور بڑھا دیا اور وہ کہنے لگے ہمیں اللہ کافی ہے اور وہ کیا اچھا کارساز ہے

لہٰذا جب انسان کا یہ عقیدہ اور ایمان ہوجائے کہ جب اس انسان کے لئے اللہ رب العزت ہی کافی ہوجائے تو اس انسان کے مسائل اس کی پریشانیاں کچھ باقی نہیں رہتیں اس کی حاجات تمام تر حاجات پوری ہوجاتی ہیں۔

مشکلات ختم ہوجاتی ہیں پریشانیاں دور ہوجاتی ہیں لیکن کامل ایمان اور یقین ہونا چاہئے اللہ رب العزت کی ذات پر کہ وہ ذات ہمیں ضرور بخش دے گی اور ہماری پریشانیاں ختم کرنے والی وہی ذات ہے اور بے شک ہم اسی کے محتاج ہیں اور وہ کسی کا محتاج نہیں ۔اس وظیفہ کو آپ نے اتوار کے دن کسی بھی نماز کے بعد کر لینا ہے جب بھی آپ کو وقت ملے جب بھی آپ کے پاس وقت ہو اور فارغ وقت میں آپ اس وظیفہ کو کرسکتے ہیں

سب سے پہلے کرنا یہ ہے کہ کسی ایک وقت کو متعین کرنا ہے اور اس نماز کو ادا کر لینا ہے نماز کو مکمل سکون و اطمینان کے ساتھ اداکرنا ہے اور پھر باوضو حالت میں بے شک مسجد میں بیٹھ کر یاگھرمیں آپ یہ وظیفہ کر سکتے ہیں جائے نماز پر بیٹھ کر قبلہ رخ ہوکر اس وظیفے کو سکون و اطمینان کے ساتھ کرنا ہے۔

اور تمام تر پریشانیوں کو اپنے ذہن میں رکھ کر اس وظیفہ کو کرنا ہے آپ نے سب سے پہلے درود ابراہیمی پڑھ لینا ہے کیونکہ اس کی بہت زیادہ فضیلت ہے بہت زیادہ برکات ہیں لہٰذا آپ درود پاک پڑھ لیجئے۔تین پانچ سات یا طاق اعداد میں جتنی مرتبہ پڑھ سکتے ہیں پڑھ لیجئے۔اس کے بعد تین سو ساٹھ مرتبہ یا متینُ پڑھ لیجئے یہ اللہ رب العزت کا نام ہے اس کا آپ نے ورد کرنا ہے اور 360 مرتبہ کرنا ہے ۔اور پھر اسی تعداد میں درود پاک پڑھ لیجئے جس تعداد میں شروع میں پڑھا تھا۔

اور پھر کامل ایمان اور یقین توکل علی اللہ رکھ کر آپ نے یہ دعا کرنی ہے اب دعا میں آپ نے اللہ رب العزت سے اپنے گناہوں کی توبہ و استغفار کرنی ہے پھر اپنی پریشانی کے بارے میں اللہ سے دعا کرنی ہے اپنی گناہوں کا اعتراف کر کے دوبارہ نہ کرنے کا قصد کیجئے انشاء اللہ آپ کا یہ عمل کرنا ہوگاا ور آپ کا کام بن جائے گا انشاء اللہ جب کام ایمان اور یقین کے ساتھ آپ اس وظیفہ کو کریں گے انشاء اللہ جو بھی پریشانی ہوگی وہ آپ کی چٹکیوں میں دور ہوجائے گی اس کے لئے آپ کے پاس حل موجود ہوگا ۔

Leave a Comment