حضرت سلیمان علیہ السلام اور انگوٹھی کے نگینے میں اسم محمدﷺ

حضرت سلیمان علیہ السّلام، اللہ تعالیٰ کے برگزیدہ نبی اور حضرت داؤد علیہ السّلام کے فرزندِ ارجمند ہیں۔ والد کے انتقال کے بعد کم عُمری ہی میں تخت نشین ہو گئے۔ آپؑ کا سلسلۂ نسب حضرت ابراہیم ؑ سے جا ملتا ہے۔ حافظ ابنِ کثیر ؒ نے آپؑ کا نسب نامہ یوں تحریر کیا ہے: سلیمانؑ بن دائودؑ بن ایشا بن عامر بن سلمون بن نخشون بن عمینااداب بن ارم بن حصرون بن فارص بن یہودا بن یعقوبؑ بن اسحاقؑ بن ابراہیمؑ۔ آپؑ کی والدہ سے متعلق بہت کم معلومات دست یاب ہیں اور جو ہیں، وہ بھی مستند نہیں۔

ابنِ ماجہ میں ایک حدیث ہے’’رسول اللہﷺ نے فرمایا’’ سلیمانؑ بن داؤدؑ کی والدہ نے ایک دفعہ نصیحت فرمائی’’بیٹا! رات بھر سوتے ہی نہ رہا کرو، اِس لیے کہ رات کے اکثر حصّے کو نیند میں گزارنا، انسان کو قیامت کے دن اعمالِ خیر سے محتاج بنا دیتا ہے۔‘‘اللہ تعالیٰ نے حضرت سلیمانؑ کو بہت سے معجزے عطا فرمائے، جن میں سے چند یہ ہیں(1)ایسی عظیم بادشاہت، جو اُن سے پہلے کسی کو نصیب ہوئی اور نہ اُن کے بعد کسی کو میّسر آئے گی

۔(2)انسانوں کے علاوہ جِنوں اور شیاطین کو اُن کے تابع کردیا۔(3)ہر طرح کے جانوروں کو نہ صرف آپؑ کا فرماں بردار کیا، بلکہ اُن کی بولیاں سمجھنے اور بولنے کی صلاحیت بھی عطا فرمائی۔(4)ہوا کو مسخر کر دیا کہ آپؑ ایک ماہ کی مسافت صبح و شام میں طے کر لیا کرتے تھے۔(5)اُن کے لیے پگھلے ہوئے تانبے کا چشمہ جاری کر دیا۔

حضرت سلیمان علیہ السلام کو آقا دو عالم ﷺ سے خاص محبت تھی۔ آپ نے جو بشارت اپنی قوم کو دی اس کے مطابق حضرت سلیمان علیہ السلام نے فرما یا کہ آپﷺ میرے محبوب اور میری جان ہیں۔حضرت سلیمان علیہ السلام نے کعبتہ اللہ میں قیام ونماز ظہر ادا فرمائی۔ پانچ ہزار اونٹ، پانچ ہزار گائیں اور بیس ہزار دنبے اللہ کی راہ میں قربان کیے اور پھر اپنی قوم اور اشراف ومعززین کو مخاطب کرکے کہا کہ یہ وہ مقام ہے جہاں نبی کریم ﷺ کی ولادت ہوگی۔

حضرت جابر بن عبد اللہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہےکہ سرکاردو عالم ﷺ نے فرمایا حضرت سلیمان بن داؤد علیہ السلام کی انگوٹھی کے نگینے میں”لَااِلٰہَ اِلَّا اللہُ مُحَمَّدٌ رَسُوْلُ اللہ” نقش تھا۔ سرکار دو عالم نے فرما یا کہ ان کی انگوٹھی کے نگینہ کا رنگ آسمانی تھا ۔ اس پر کلمہ پاک لکھا ہوا تھا ۔

(خصائص الکبریٰ جلد اول ص 21)حضرت سلیمان علیہ السلام سرکاردوعالم ﷺ کے نام والی انگوٹھی ہاتھ میں پہچان کر حضرت سلیمان علیہ السلام امور سلطنت بہت اچھے طریقے سے چلاتے تھے اور جب یہ انگوٹھی ان کے پاس نہ ہوتی تھی تو دل کو سکون واطمینان نہ ہوتا۔ سیرت حلبیہ مترجم جلد اول صفحہ 764؛ معارف اسم محمد ﷺ 242

Leave a Comment