جنات کا ایمان لاکر عشق مصطفی ﷺ کا اظہار کرنا،ایمان افروز واقعہ

جنات کا ایمان لاکر عشق مصطفیٰ ﷺ کا اظہار کرنا اس ہستی سے اظہار ِ عشق کرتے ہیں۔ جن سے جنات محبت کررہے ہیں اور ایمان بھی لا رہے ہیں اس لیے کہ آپ ﷺ سب کے رسول ہیں۔

علامہ جلال الدین سیوطی ؒ خصائص الکبریٰ جلد اول میں تحریر فرما تے ہیں اللہ تعالیٰ نے ارشاد فرمایا۔ “قُلْ اُوْحِیَ اِ لَیَّ اَنَّہُ ا سْتَمَعَ نَفَرٌمِّنَ الْجِنِّ فَقَالُوْٓ ا اِنَّا سَمِعْنَا قُرْ اٰنًا عَجَبًاڳ یَّھْدِیْٓ اِلَی الرُّ شْدِ فَاٰ مَنَّا بِہٖ ط وَلَنْ نُّشْرِ کَ بِرَ بِّنَا اَحَدًا”سورۃ الجن آیات

2،1ترجمہ: “تم فرماؤ مجھے وحی ہوئی کہ کچھ جنوں نے میرا پڑھنا کان لگا کر سنا تو بولے ہم نے ایک عجیب قرآن سنا کہ بھلائی کی راہ بتاتا ہے تو ہم اس پر ایمان لائے اور ہم ہرگز کسی کو اپنے رب کا شریک نہ کریں گے”۔ (ترجمہ کنزالایمان)صرف انسان پرندے ، درندے ، ملائکہ ، حشرات الارض ہی نہیں بلکہ اللہ کی مخلوق جنات بھی سرکاردوعالم ﷺ کے غلام اور عاشقانِ رسول ﷺ میں شامل ہیں۔ حضور اکرم ﷺ کی خدمت کرنا ان کے ایمان کا حصہ ہے اور ان کی محبت کا ثبوت ہے۔

علامہ ابن کثیر نے اپنی تفسیر میں حضرت سودا بن قارب رضی اللہ عنہ کا ایک ایمان افروز واقعہ بیان کیا ہے حضرت براء بن عازب فرماتے ہیں کہ ایک روز امیر المومنین حضرت عمربن خطاب خطبہ ارشاد فرمارہے تھے اور پوچھا کہ آپ میں سودا بن قارب ہیں؟ سب خاموش ہوگئے۔ اگلے سال پھر یہی سوال کیا میں نے عرض کیا یہ سودا کون ہیں؟

حضرت عمر رضی اللہ عنہ نے فرما یا ان کے ایمان لانے کا واقعہ بڑا عجیب وغریب ہے اسی اثناء میں حضرت سودا بھی آگئے ۔ حضرت عمر فاروق رضی اللہ عنہ نے فرمایا اے سودا اپنے ایمان لانے کا واقعہ بیان کرو۔ اے ! امیر المومنین میں ہند میں تھا ۔ ایک جن میرے تابع تھا ایک شب میں سویا ہواتھا۔ جن نے آکر مجھے خواب میں کہا اٹھو اور بات سنو، اللہ تبارک وتعالیٰ نے اپنے آخری نبی ﷺ کو معبو ث فرمایا ہے دوڑو اور اس پر ایمان لاؤتین رات یونہی ہوتا رہا۔

اس کے بار بار کہنے سے میرے دل میں اسلام کی محبت پیدا ہوگئی اور میں اونٹنی پر سوار ہو کر مکہ مکرمہ پہنچا میں نے دیکھا کہ لوگ حضور پاکﷺ کے آس پاس حلقہ بنائے بیٹھے ہیں جب سرکاردوعالم ﷺ کی نگاہ مجھ پر پڑی تو فرمایا اے سودا خوش آمدید۔ جو تجھے لے آیا ہے ۔ ہم ان کو جانتے ہیں میں نے چند شعر لکھے تھے عرض کی اجازت ہو تو پیش کروں ۔ آپﷺ نے اجازت فرمائی میں نے عظمت رسول ﷺمیں قصیدہ پیش کیا۔

Leave a Comment