بری عادت سے بچنے کا وظیفہ

السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!یہ تحریر بچوں اور بڑوں کے لئے یکساں مفید ہے ۔بعض اوقات مائیں اپنے چھوٹے ناسمجھ بچوں کے حوالے سے اس لئے بہت زیادہ پریشان ہوتی ہیں کہ جو بچے بچپن ہی سے انگوٹھا پینے یا انگلیاں پینے کے عادی ہوتے ہیں اور بعض بچوں کی عادت ہوتی ہے کہ وہ منہ میں کپڑ ا رکھ لیتے ہیں اور اس کو چوستے رہتے ہیں اور اس طرح کے ناسمجھ بچے ہوتے ہیں تو ان کو تو سمجھایا بھی نہیں جاسکتا کہ یہ بری بات ہے ایسے نہیں کرو تو اس حوالے سے بہت زیادہ پریشان ہوتے ہیں والدین کہ ان کوکیسے روکا جائے کیسے منع کیاجائے۔

انگوٹھا پینے والی عادت نمبر ون پر ہے کہ بچے بہت چھوٹے ناسمجھ انگوٹھا پیتے ہیں باربار منہ میں ڈال لیتے ہیں یا پھر اگر اوپر کوئی چیز ڈالی جائے اور پھرروتے ہیں ان کو تکلیف بھی ہوتی ہے لیکن وہ اپنی عادت سے مجبور ہوتے ہیں تو یہ عادت ایسی ہوتی ہے کہ وہ ان کے ساتھ ساتھ بڑی ہوتی رہتی ہے پکی ہوتی رہتی ہے پختہ ہوتی رہتی ہے

تو جب بچے بڑے ہوجاتے ہیں اور سکون جاتے ہیں تووہ سکول میں بھی انگوٹھا پیتے ہیں اور انگلیاں چوس رہے ہوتے ہیں اسی طرح بعض بڑے لوگ بھی ہوتے ہیں جن کی کچھ ایسی عادات ہوتی ہیں جو اچھی نہیں ہوتی پسند نہیں کی جاتیں لیکن ان کی عادت وہ خود اس سے تنگ ہوتے ہیں لیکن وہ عادت اتنی پکی ہوچکی ہوتی ہے کہ اس سے جان چھڑا نا ان کے لئے بہت زیادہ مشکل ہوتا ہے ۔کسی بھی نماز کے بعد جو بھی نماز پڑھی ہو جس کے بعد بھی آپ کو مناسب وقت ملے اس کے بعد آپ نے درود شریف پڑھ لینا ہے

اور درود ابراہیمی کو تین مرتبہ پڑھ لیجئے اس کے بعد اللہ تعالیٰ کا اسم مبارک یَامَانِعُ سو مرتبہ پڑھ لیجئے یعنی سو دانے والی ایک تسبیح مکمل پڑھ لیجئے اور آخر میں آپ نے دوبارہ تین مرتبہ درود ابراہیمی پڑھنا ہے اور جس بچے یا بڑے کی جس عادت سے بھی آپ ناخوش ہیں آپ چاہتے ہیں کہ اس کی یہ عادت ختم ہوجائے اس پر پھونک مار کر دم کر دیجئے پانی پر دم کر کے بھی اس کو پلائیے اور اس کے علاوہ پھر اس کی اس عادت سے چھٹکارے کے لئے اللہ تعالیٰ سے خوب اچھی طرح سے دعاکیجئے ۔

انشاء اللہ کچھ دن میں ہی یہ عادتیں ختم کردے گا اور آپ کا مقصد پورا ہوجائے گا بچے کی یابڑے کی جو بھی اچھی عادت نہیں ہوگی جس کے لئے آپ یہ عمل کریں گے وہ ختم ہوجائے گی ۔یہ آزمایا ہوا اور مجرب و اکسیر وظیفہ ہے۔

Leave a Comment